213

یونیورسٹیوں میں تقرریوں اور بجٹ تیاری میں درست طریقہ کار اپنایاجائے. گورنر کی ہدایت … باہمی مشاورت سے میرٹ کی پامالی ناقابل برداشت ہے اور اس پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیاجائیگا. گورنر شاہ فرمان

گورنرخیبرپختونخوا شاہ فرمان نے صوبہ کی اعلی تعلیمی جامعات کو ہدایت کی ہے کہ تقرریوں اور بجٹ تیاری میں درست طریقہ کار اپنایاجائے۔ یونیورسٹیاں اپنی ترجیحات کا تعین کریں،باہمی مشاورت سے میرٹ کی پامالی ناقابل برداشت ہے اور اس پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیاجائیگا۔ یہ ہدایات انہوں نے جمعرات کے روززرعی یونیورسٹی پشاور اور اسلامیہ کالج یونیورسٹی پشاور کے الگ الگ سینٹ اجلاس کی صدارت کے دوران دیں۔ گورنرنے معیاری تحقیقی کام کی ضرورت پر زوردیتے ہوئے زرعی یونیورسٹی کوہدایت کی کہ وہ زرعی شعبہ کی ترقی کیلئے ایک موثراورجامع پلان تشکیل دیں تاکہ پتہ چلے کہ صوبے کے کن علاقوں میں زمین کون سی فصل کی کاشت کیلئے موزوں ہے۔ بدقسمتی سے یونیورسٹیاں طلباء کو پی ایچ ڈی کی ڈگری تو تھما دیتے ہیں لیکن عملی کام نظرنہیں آتا اور ریسرچ ورک یونیورسٹیوں کی الماریوں میں ہمیشہ ہمیشہ کیلئے محفوظ کرلیاجاتاہے۔ گورنرخیبرپختونخوا نے ایک بارپھر تمام یونیورسٹیوں کوہدایت کی کہ وہ اپنامالی سال کابجٹ مئی کے وسط میں سینٹ اجلاس میں منظوری کیلئے پیش کریں ورنہ انکابجٹ منظور نہیں کیاجائیگااور تمام یونیورسٹیاں اپنے بجٹ کاآڈٹ بھی یقینی بنائیں۔ بعدازاں سینیٹ نے اسلامیہ کالج یونیورسٹی کے مالی سال 2017-18 اور 2018-19 کے بجٹ کی منظوری بھی دی۔ اجلاس میں رکن صوبائی اسمبلی ارباب جہانداد، پرنسپل سیکرٹری برائے گورنر نظام الدین، سیکرٹری اعلی تعلیم منظور احمد، سیکرٹری زراعت محمد اسرار ، وائس چانسلرز اور سینٹ کے دیگر اراکین نے شرکت کی۔ #

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں